28

حکومت مالی سال کے اختتام تک محصولات کے مراکز کو 8000 تک بڑھا دے گی: وزیراعلیٰ

لاہور-وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ سب رجسٹرار اور ای خدمت مراکز کے تمام دفاتر ون ونڈو رجسٹریشن کی سہولت فراہم کر رہے ہیں اور پنجاب بھر میں پراپرٹی سروسز کو تبدیل کر رہے ہیں۔

انہوں نے یہاں ایک بیان میں کہا ، “پنجاب کے تمام اضلاع کی تازہ ترین اور جامع معلومات جمع کرنے کے لیے ضلعی گزٹئیر بھی شائع کیے جا رہے ہیں۔”

وزیراعلیٰ نے کہا کہ ‘آمدنی خدمت کچہری’ عام لوگوں کو ان کی شکایات اور شکایات کو دور کرکے بڑی راحت فراہم کررہی ہے۔ انہوں نے کہا ، “حکومت ، شفافیت کے وژن پر عمل پیرا ہے اور فوری سروس کی فراہمی پر یقین رکھتی ہے۔” عثمان بزدار نے کہا کہ عوام کی دہلیز پر ریونیو سروسز کی فراہمی کے لیے 850 ریونیو سنٹر قائم کیے گئے ہیں۔ موجودہ مالی سال کے دوران ریونیو سینٹرز کی تعداد 8000 تک بڑھا دی جائے گی۔ زرعی فصلوں کی پیداوار کا صحیح اندازہ لگانے کے لیے ایک ڈیجیٹل ‘گردواری’ سسٹم بھی شروع کیا گیا ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ دور دراز علاقوں کے لوگوں کو ریونیو سروسز کی فراہمی کے لیے موبائل سنٹرز متعارف کروائے گئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریونیو کورٹ کیس مینجمنٹ سسٹم تیز انصاف فراہم کر رہا ہے۔ صوبے میں ریونیو ریکارڈ کی 100 فیصد ڈیجیٹلائزیشن سے لوگوں کو فائدہ ہوگا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ سرکاری اراضی کی مالیت ایک کروڑ روپے ہے۔ 462 ارب اور ایک لاکھ 80 ہزار ایکڑ سے زائد رقبہ کو دوبارہ حاصل کیا گیا۔ اس کے علاوہ پنجاب کے شہری علاقوں میں 4056 ایکڑ زمین قبضہ مافیا سے واپس لی گئی ہے۔ جبکہ دیہی علاقوں میں ، 176000 ایکڑ سے زائد اراضی بھی واپس لی گئی ہے ، وزیراعلیٰ نے وضاحت کی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے سرکاری اراضی پر قبضہ کرکے اپنی رٹ ثابت کی ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور جی پی ایس پر مبنی سیٹلائٹ سسٹم کی مدد سے زمین کو مضبوط کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ” قبضہ مافیا ” کے خلاف کریک ڈاؤن بلا امتیاز جاری رہے گا اور ” قبضہ مافیا ” کی لعنت کو روکنے کے لیے کوئی کسر نہیں چھوڑی جائے گی۔ پنجاب بورڈ آف ریونیو نے گزشتہ مالی سال کے دوران محصولات کی وصولی میں زبردست اضافہ کیا ہے۔ 59.8 ارب روپے کے ہدف کے مقابلے میں ، بورڈ آف ریونیو نے گزشتہ مالی سال کے دوران 62 ارب روپے سے زائد کے واجبات/ٹیکس وصول کیے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ سافٹ وئیر بلوں پر کام بھی جاری ہے۔

.



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں