9

کسانوں کا جنتر منتر پر احتجاج فوٹو گیلری

01 / 37

مشتعل 200 کسانوں کے ایک گروپ نے نئی دہلی کے جنتر منتر میں تینوں زرعی قوانین کے خلاف آواز اٹھانے کے لئے ایک ‘کسان سنساد’ کا انعقاد کیا۔ کسان رہنماؤں نے کہا کہ ‘کسان سنسد’ کے انعقاد کا مقصد یہ ظاہر کرنا ہے کہ ان کا احتجاج ابھی بھی زندہ ہے اور مرکز کو بتائیں کہ وہ بھی پارلیمنٹ کو چلانے کا طریقہ جانتے ہیں۔ احتجاج کے تناظر میں ، دہلی پولیس نے امن و امان برقرار رکھنے کے لئے جنتر منتر پر سیکیورٹی سخت کردی۔ کسان رہنما رمندر سنگھ پٹیالہ نے کہا ، “سنساد ‘کے تین سیشن ہوں گے۔ چھ ممبروں کا انتخاب کیا گیا ہے جنہیں تینوں سیشنوں کے لئے اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے طور پر منتخب کیا جائے گا۔ پہلے سیشن میں کسان رہنما حنان مولا اور منجیت سنگھ اس عہدے کے لئے منتخب کیا گیا تھا۔ یوم جمہوریہ تشدد کے بعد ، کسانوں نے اس بار اجتماع کو چھوٹا بنانے کا فیصلہ کیا۔ “ایک رہنما نے کہا ،” نہ ہی ہم اور نہ ہی حکومت بڑے اجتماع میں راضی ہیں۔

(اے ایف پی)

02 / 37

03 / 37

04 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

05 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

06 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

07 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

08 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

09 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

10 / 37

کسانوں نے جنتر منتر پر احتجاج کیا

page_like_or_unlike : function(url, html_element) { ga('send', 'event', 'Like_Gate', 'UnLike', 'WEB'); delete_cookie_val_new('clickedfblike',"/",window.getDomain()); console.log("cookie deleted"); } }

window.fbAsyncInit = function() { FB.init({appId: '898459706886386',oauth:true, status: true, cookie: true, xfbml: true}); FB.Event.subscribe('edge.create', timesphotogallery.fbMethods.page_like_or_unlike_callback); FB.Event.subscribe('edge.remove', timesphotogallery.fbMethods.page_like_or_unlike); setTimeout("getSessionFB()",2000); };

(function(d, s, id) { var js, fjs = d.getElementsByTagName(s)[0]; if (d.getElementById(id)) return; js = d.createElement(s); js.id = id; js.src="https://connect.facebook.net/en_US/all.js#xfbml=1&appId=898459706886386"; fjs.parentNode.insertBefore(js, fjs); }(document, 'script', 'facebook-jssdk'));

.



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں